راولاکوٹ: نالہ بازار کی پارکنگ سے ملنے والی نعش کی شناخت ہوگئی، پوسٹ مارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے

پاکستانی زیر انتظام جموں‌کشمیر کے ضلعی صدر مقام راولاکوٹ میں‌ایک نامعلوم شخص کی نعش برآمد ہوئی ہے. یہ نعش پیر کے روز دن بارہ بجے کے قریب میونسپل کارپوریشن کے خاکروبوں کو صفائی کے دوران نالہ بازار کے عقب میں پارکنگ ایریا کے ایک نکڑسے ملی. خاکروبوں‌کی اطلاع پر پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے موقع پر پہنچے اور انہوں‌نے نعش کو تحویل میں‌لیتے ہوئے شیخ زید ہسپتال (سی ایم ایچ) راولاکوٹ پہنچایا.

عینی شاہدین کے مطابق نعش کئی دن پرانی ہونے کی وجہ سے پہچانے جانے کے قابل نہیں‌تھی. جبکہ کچھ حصوں‌میں کیڑے پڑ چکے تھے. بظاہر ایسا لگ رہا تھا کہ کوئی شخص چادر لپیٹ کر بیٹھا ہوا تھا اور وہیں مر گیا اور کوئی روز سے اسی حالت میں‌ہے.

پوسٹ مارٹم اور جیب سے ملنے والے موبائل فون کے ذریعے نعش کی شناخت کا عمل مکمل کیا گیا۔ پولیس کے مطابق مذکورہ شخص کا نام عابد صدیق ولد محمد صدیق ہے، جو راولاکوٹ کے نواحی علاقہ کھڑک کا رہائشی تھا۔ منشیات کا عادی ہونے کی وجہ سے کچھ عرصہ قبل گرفتار رہا اور پوسٹ مارٹم کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق بھی منشیات کا استعمال ہی اس کی موت کی وجہ بنا۔

پوسٹ مارٹم کا عمل مکمل ہونے کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کر دی گئی ہے۔ تاہم ورثاء کی جانب سے اس سے متعلق کوئی موقف سامنے نہیں آیا ہے۔ 

پولیس کا نعش ملنے کے بعد کہنا تھا کہ بظاہر جسم پر کسی چوٹ یا زخم کے آثار نہیں‌لگ رہے. لیکن نعش کے گل سڑ جانے کی وجہ سے پوسٹ مارٹم سے قبل حتمی رائے قائم کرنا ممکن نہیں‌ہے. پوسٹ مارٹم کے بعد موبائل فون کے ذریعے سے شناخت کا عمل مکمل کیا جائے گا.

 

Leave a Reply

Translate »
%d bloggers like this: