قمر الزماں‌خاں کا کالم: ‘گندہ ہے پر دھندہ ہے’