راولاکوٹ: کرونا سے دوسری موت، دریک میں‌حفاظتی تدابیر کے تحت آخری رسومات ادا کی گئیں

پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے ضلع پونچھ کے صدر مقام راولاکوٹ میں‌کورونا وائرس کی وجہ سے دوسری موت واقع ہوئی ہے. دریک کے رہائشی 81 سالہ راجہ محمد بیگ چند روز قبل کورونا وائرس کا شکار ہوئے اور وہ شیخ زید ہسپتال میں‌آئیسولیشن وارڈ منتقل کئے گئے تھے لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے.

ہفتہ کی شام کو انکی موت واقع ہو گئی،آج اتوار کو راجہ محمد بیگ کی آخری رسومات ادا کی گئیں جس کے بعد ان کی میت کو سپرد خاک کر دیاگیا. نماز جنازہ دریک عید گاہ میں‌ادا کی گئی. جس میں‌سابق وزیر حکومت سردار طاہر انور سمیت اہم سیاسی و سماجی شخصیات اورمقامی درجنوں‌ افراد نے شرکت کی.

تاہم پولیس ، محکمہ صحت اور انتظامیہ کی بڑی تعداد موقع پرموجود رہی اور نماز جنازہ کے دوران مناسب وقفہ قائم رکھا گیا، جبکہ عید گاہ سے میت کو قبرستان منتقل کیا گیا جہاں‌چند لوگوں‌کی موجودگی میں‌تدفین ہوئی.

محکمہ صحت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ راجہ محمد بیگ کے خاندان میں‌ دو مزید افراد کورونا سے متاثر ہوئے ہیں. راولاکوٹ میں‌لوکل ٹرانسمیشن کے ذریعے مجموعی طور پر یہ دوسری موت تھی، تاہم راولاکوٹ ضلع پونچھ سے تعلق رکھنے والے متعدد افراد پاکستان کے مختلف شہروں اور دنیا کے مختلف ممالک میں‌کورونا کی وجہ سے موت کا شکار ہو چکے ہیں.

راجہ محمد بیگ یو اے ای میں مقیم قوم پرست و ترقی پسند رہنما جنید احمد کے والد تھے. نیشنل عوامی پارٹی، این ایس ایف اور دیگر سیاسی و سماجی تنظیموں‌کے رہنماؤں‌نے جنید احمد سے انکے والد کی وفات پر اظہار تعزیت کیا ہے.

دوسری جانب محکمہ صحت عامہ کی ہفتہ کے روز چار بجے تک کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی زیر انتظام جموں‌کشمیر میں‌مزید 10 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو گئی اور 03افراد کی کرونا وائرس کی وجہ سے موت ہوئی جبکہ کرونا کے19 مریض صحت یاب ہو گئے اور 305نئے افراد کے کرونا کے شبہ میں ٹیسٹ لیے گئے۔ نئے سامنے آنے والے کیسز میں سے 04کا تعلق مظفرآباد،01کا جہلم ویلی، 01کا نیلم ویلی، 01کاپلندری،02کا کوٹلی اور ایک کا بھمبر سے ہے ۔ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولاکوٹ، مظفرآباد اور پلندری میں ایک ایک شخص کی کرونا کی وجہ سے موت ہوئی۔

پاکستانی زیر انتظام کشمیر میں اب تک 13339 افراد کے ٹیسٹ لیے گئے جن میں سے 13287کے رزلٹ آچکے ہیں اور 813افراد میں کرونا وائرس کی موجودگی پائی گئی ہے جن میں سے 336 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں اور انہیں ڈسچارج کر دیا گیا ہے جبکہ 458 مریض زیر علاج ہیں اور 19 مریضوں کی موت ہوئی ہے جن میں سے 9کا تعلق مظفرآباد،01کا راولاکوٹ،3کا باغ، 3افرادکاتعلق میرپورجبکہ02 کاسدھنوتی اور01کا بھمبرسے ہے۔

رپورٹ کے مطابق صحت یاب ہونے والے 336 افراد میں سے آئسولیشن ہسپتال مظفرآباد سے 83 ،آئسولیشن سینٹر نیوپی ایم ہاوس مظفرآباد 66، ڈی ایچ کیو جہلم ویلی سے4، سی ایم ایچ راولاکوٹ سے29،ڈی ایچ کیو باغ سے45،ڈی ایچ کیوسدھنوتی سے 13،ڈی ایچ کیو میرپور سے16،نیو سٹی ہسپتال میرپور سے22،ٹی ایچ کیو ہسپتال ڈڈیال میرپورسے5،ڈی ایچ کیو بھمبر سے32جبکہ ڈی ایچ کیو کوٹلی سے21 مریض صحت یاب ہوئے جنہیں ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔

کرونا کے458 مریضوں میں سے307 مریضوں کو حکومت کی پالیسی کے تحت مختلف اضلاع میں ہوم آئسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 151مریض مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں، جن میں سے سی ایم ایچ مظفرآباد میں 06مریض ،آئسو لیشن ہسپتال مظفرآبادمیں 25، آئسولیشن سینٹر نیوپی ایم ہاوس مظفرآباد22،ڈی ایچ کیو جہلم ویلی میں 01،ڈی ایچ کیو نیلم میں5،سی ایم ایچ راولاکوٹ میں02، ڈی ایچ کیو باغ میں08، ڈی ایچ کیو سدھنوتی میں 10،حویلی میں04،ڈی ایچ کیو میرپور میں28، نیو سٹی ہسپتال میرپور04،ٹی ایچ کیو ڈڈیال میں01، ڈی ایچ کیو بھمبر میں 23، ڈی ایچ کیو کوٹلی میں12مریض زیر علاج ہیں۔

رپورٹ کے مطابق11943افراد میں کرونا وائرس کی موجودگی نہیں پائی گئی اور52افراد کے ٹیسٹ کے رزلٹ آنا باقی ہیں۔نئے افراد کے کرونا کے ممکنہ کیسز کے حوالہ سے لیے گے ٹیسٹ کی رپورٹ ایک دو روز میں آجائے گی۔