پاکستانی کشمیر:‌نماز عید کھلی جگہوں پر ہوگی، گلے ملنے پر پابندی عائد

پاکستان کے زیر انتظام جموں‌کشمیر میں‌کورونا وائرس کی وباء کی وجہ سے احتیاطی تدابیر کےپیش نظر اس مرتبہ عید الفطر کی نماز مساجد کے علاوہ کھلی جگہوں‌پر ادا کی جائیگی. عیدالفطر کی نماز کے بعد ایک دوسرے سے عید ملنے اوربغل گیر ہونے پر پابندی عائد ہوگی.

ڈپٹی کمشنر پونچھ مرزا ارشد محمود جرال نے کہا ہے کہ راولاکوٹ شہر میں نماز عید پوسٹ گریجویٹ کالج گراؤنڈ، صابر شہید اسٹیڈیم اور خان اشرف خان اسٹیڈیم میں ادا کی جائے گی.

پاکستانی زیر انتظام جموں‌کشمیر کی حکومت کی جانب سے جاری شدہ SOPs کے مطابق گھر سے وضو کر کے اور اپنی جائے نماز ساتھ لائی جائے گی۔نمازعید سے قبل یا بعد ہاتھ ملانے یا گلے ملنے سے اجتناب کے لیے اور سماجی فاصلہ رکھنے کے لیے علماء کرام نمازیوں کو ہدایت کریں گے.

نمازی اپنے جوتے شاپر میں ڈال کر ساتھ رکھیں گے تاکہ جوتے پہنتے اور اتارتے وقت بھیڑ نہ ھو.

ڈپٹی کمشنر پونچھ کا مزید کہنا تھا کہ ضلع اور تحصیل کے اسسٹنٹ کمشنر صاحبان کی ڈیوٹی لگا دی ہے کہ وہ عیدالفطر کی نماز کے لیے کھلی جگہ کا اہتمام کریں اور بذریعہ لوڈ سپیکر لوگوں کو عید کی نماز کے حوالے سے جاری ہونے والی ایس اوپیز سے آگاہ کریں.

ان کا مزید کہنا تھا کہ دیہی علاقوں میں SOPs پر عملدرآمد کی ذمہ داری بھی متعلقہ اسسٹنٹ کمشنر صاحبان کی ہو گی کہ وہ ہمراہ پولیس ایس اوپیز پر عمل کروائیں تاکہ عیدالفطر کی خوشی کے موقع پر عوام کی جان کے تحفظ کو یقینی بنایا جا سکے

Leave a Reply

Translate »
%d bloggers like this: