غداری کیس: شہلا رشید کی درخواست ضمانت مسترد، قبل از گرفتاری نوٹس دینے کی ہدایت

بھارتی عدالت نے غداری کیس میں شہلا رشید کی درخواست ضمانت قبل از گرفتاری کو مسترد کرتے ہوئے پولیس کو پابند کیا ہے کہ وہ انکی گرفتاری سے دس روز قبل نوٹس گرفتاری دے.

جموں و کشمیر پیپلز مومنٹ کی رہنما شہلا رشید پر کشمیر سے متعلق ایک ٹوئٹ کرنے کے بعد ملک سے غداری کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

پیشگی ضمانت کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے عدالت نے پولیس کو گرفتاری سے 10 روز قبل شہلا رشید کو نوٹس دینے کی ہدایت دی.

تاہم سماعت کے دوران تفتیشی عہدیدار نے کہا کہ مقدمہ میں ابتدائی جانچ چل رہی ہے۔ساؤتھ ایشین وائر کے مطابق عدالت نے الزامات کی نوعیت اور تفتیشی عہدیدار کے بیان کو مدنظر رکھتے ہوئے پیشگی ضمانت کی درخواست کو مسترد کردیا لیکن تفتیشی عہدیدار کو ہدایت دی کہ اگر شہلا رشید کو گرفتار کرنا ضروری ہوتو انہیں 10 روز قبل نوٹس جاری کرے۔

مقامی میڈیا کے مطابق شہلا رشید کے وکیل نے کہا کہ ان کی موکل تحقیقات کا سامنا کرنے کیلیے تیار ہے اور وہ پولیس کے ساتھ مکمل تعاون کریں گی۔

واضح رہے کہ پانچ اگست کے بعد جموں‌کشمیر میں پیدا ہونیوالی صورتحال کی عینی شاہد کے طور پر شہلا رشید نے دہلی میں‌جا کر کچھ سوشل میڈیا سائٹ ٹویٹر پر بیانات جاری کئے تھے، مذکورہ بیانات میں‌بھارتی فوج اور نیم فوجی دستوں کی جموں‌کشمیر میں‌کارروائیوں اور ظلم و جبر کو بے نقاب کیا گیا تھا، دوران حراست وحشیانہ تشدد اور ٹارچر کا نشانہ بننے والے اسیران کی چیخیں مقامی آبادی کو بذریعہ لاؤڈ سپیکر سنائے جانے کے الزامات فورسز پر عائد کئے تھے.

مذکورہ ٹویٹس کا بھارتی فوج نے سخت نوٹس لیا تھا. بعد ازاں شہلا رشید کے خلاف مقدمات قائم کر لئے گئے تھے.

Leave a Reply

Translate »
%d bloggers like this: