این ایس ایف کی ”انتفادہ کشمیر “تحریک کا آغاز: چھ سیمینارز، رابطہ مہم کے بعد مظفرآباد میں مرکزی کانفرنس ہوگی

جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن نے باضابطہ طو پر انتفادہ کشمیر تحریک کا آغاز کر دیا ہے۔ انتفادہ کشمیر تحریک کے دوران جے کے این ایس ایف کے مرکزی اور ضلعی عہدیداران رابطہ مہم چلائیں گے، جامعات اور کالجز میں سٹال اور ممبر شپ مہم چلائی جائیگی، راولاکوٹ، باغ، پلندری، کوٹلی، ہجیرہ اور کھائی گلہ میں سیمینارز کا انعقاد کیا جائے گا، جبکہ انتفادہ کشمیر تحریک کے سلسلہ میں مرکزی کانفرنس اکتوبر کے پہلے ہفتہ میں مظفرآباد کے مقام پر ”انقلاب کشمیر کانفرنس “ کے نام سے منعقد کی جائیگی۔

یہ اعلانات مرکزی صدر جے کے این ایس ایف ابرار لطیف نے دورہ مظفرآباد کے دوران طلبہ سے ملاقاتوں، مظفرآباد ڈویژن کے عہدیداران اور کارکنان کے اجلاس میں شرکت کے بعد کارکنوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران کئے ہیں۔ پریس کانفرنس میں ابرار لطیف کے ہمراہ نائب صدر مروت راٹھور، باسط ارشاد باغی، سٹی صدر مظفرآباد خواجہ مجتبیٰ، چیئرمین جامعہ کشمیر حماد منیر سلہریا، زاہد حسین، راجہ حسنین، آرگنائزر مسٹ آفاق عباسی، ضلعی آرگنائزر مفید عباسی اور دیگر بھی موجود تھے۔

لبریشن فرنٹ کی تیتری نوٹ لانگ مارچ میں شرکت کا اعلان
مرکزی صدر این ایس ایف ابرار لطیف نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن سات ستمبر کو جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کی کال پر تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ کی جانب لانگ مارچ اور احتجاجی دھرنے میں بھرپور شرکت کریگی، اس سلسلہ میں کارکنان ایس ایف اپنے جھنڈوں، اپنے بینرز اور پلے کارڈز کے ہمراہ شرکت کےلئے تیاریاں کر رہے ہیں۔

این ایس ایف پیپلز نیشنل الائنس کا ہر اول دستہ ہوگی
جے کے این ایس ایف پاکستانی کشمیر میں قائم ہونے والے ترقی پسند اور قوم پرست تنظیموں پر مشتمل پیپلز نیشنل الائنس کا حصہ ہے اور الائنس کے ہر اول دستہ کے طور پر پورے کشمیر میں جے کے این ایس ایف کے کارکنان رابطہ مہم کا حصہ ہوں گے، جے کے این ایس ایف نوجوانوں کو منظم کرنے اور مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے سائنسی سوشلزم کے نظریات پر مبنی عبوری پروگرام نوجوانوں تک پہنچانے کےلئے انتفادہ کشمیر تحریک کے نام سے مہم بھی شرو ع کر رہی ہے جس کے دوران جامعات، کالجز سمیت مختلف اضلاع اور تحصیل ہیڈکوارٹرز میں سیمینارز اور تقریبات منعقد کی جائینگی جہاں نوجوانوں کو موجودہ حالات سے نبرد آزما ہونے اور کشمیر کی حقیقی آزادی کی تحریک کو منظم کرنے کےلئے نہ صرف انقلابی نظریات سے لیس کیا جائے گا بلکہ حقیقی انقلابی قیادت کی تیاری کے عمل کو تیز تر کرتے ہوئے آزادی کی تحریک کو سائنسی بنیادوں پر نہ صرف منقسم کشمیر کے دیگر خطوں میں منظم کرنے بلکہ پاکستان اور بھارت کے محنت کشوں اور نوجوانوں کے ساتھ عملی جڑت بنانے کے حوالے سے عملی اقدامات کئے جائیں گے۔

مظفرآباد میں مرکزی ”انقلاب کشمیر کانفرنس “اکتوبر کے پہلے ہفتہ میں
انہوں نے کہا کہ مظفرآباد میں منعقد ہونے والی مرکزی ”انقلاب کشمیر کانفرنس“ نہ صرف کشمیر بلکہ پاکستان بھر کے ترقی پسند نوجوانوں پر مشتمل ایک ایسا اجتماع ہوگا جو کشمیر کی حقیقی آزادی اور پاکستان کے محنت کشوں کی حقیقی آزادی کی جدوجہد میں ایک اہم سنگ میل ثابت ہو گا۔ ابرار لطیف کا مزید کہنا تھاکہ جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن جدید سائنسی سوشلزم کے نظریات کی بنیاد پر جدوجہد کے عمل میں مصروف ہے اور این ایس ایف کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اس نے اپنی ابتداءمیں ہی نہ صرف طلبہ مسائل کے حل بلکہ کشمیر کی حقیقی آزادی کی جدوجہد کو سائنسی بنیادوں پر منظم کرنے کےلئے جو پروگرام دیا تھا آج وہ این ایس ایف کے نظریات کی برتری کو ثابت کر رہا ہے، آج تمام ترقی پسند قوتیں اس نتیجہ پر پہنچ چکی ہیں کہ قومی آزادی کی جدوجہد کو طبقاتی بنیادوں پر پاکستان اور بھارت کے محنت کش طبقہ کی جدوجہد کے ساتھ منسلک کرتے ہوئے اس خطے سے سرمایہ دارانہ حاکمیت کے خاتمے اور تمام قومیتوں کی آزاد اور خودمختار سوشلسٹ ری پبلک ہا پر مشتمل پورے برصغیر کی سوشلسٹ فیڈریشن کے سوا کشمیریوں کی غلامی سمیت برصغیر پاک و ہند کے ڈیڑھ ارب سے زائد انسانوں کی بقاءکا کوئی اور راستہ موجود نہیں ہے۔

Leave a Reply

Translate »
%d bloggers like this: